صوفیہ امامیہ نوربخشیہ

میقات


میقات جہاں سے احرام باندھے بغیر گزرنا جائز نہیں۔
وَالْمَوَاقِیْتُ الَّتِیْ لَا یَجُوْزُ التَّجَاوُزُ عَنْھَا اِلَّا مُحْرِمًا لِاَھْلِ الْمَدِیْنَۃِ ذُوْ الْحُلَیْفَۃِ وَ لِاَھْلِ الْعِرَاقِ ذَاتُ عِرْقٍ وَلِاَھْلِ الشَّامِ الْجُحْفَۃُ وَلِاَھْلِ النَّجْدِ قَرْنُ الْمَنَازِلِ وَلِاَھْلِ الْیَمَنِ یَلَمْلَمُ وَاِنْ اَحْرَمَ قَبْلَ تِلْکَ الْمَوَاقِیْتِ یَعْنِی الْعِرَاقِیَّ مِنَ الْعَتِیْقِ وَاَفْضَلُہُ الْمَسْلَخُ وَاَوْسَطُہُ غَمْرَۃُ وَاٰخِرُہُ ذَاتُ عِرْقٍ وَالْمَدِنِیَّ مِنْ مَسْجِدِ الشَّجَرَۃِ کَانَ اَفْضَلَ وَاِنْ اَحْرَمَ قَبْلَ ھٰذِہِ الْمَوَاقِیْتِ جَازَ اَیْضًا اِنْ وَقَعَ فِیْ اَشْہُرِ الْحَجِّ وَاَشْہُرُہُ شَوَّالٌ وَذُوْالْقَعْدَۃِ وَمِنْ ذِیْ الْحَجَّۃِ مَا یَلِیْقُ بِہِ وَ مِیْقَاتُ مَنْ کَانَ بِمَکَّۃَ فِی الْحَجِّ الْحَرَمُ وَفِیْ الْعُمْرَۃِ الْحِلُّ وَمَنْ کَانَ مَوْطِنُہُ اَقْرَبَ مِنَ الْمَوَاقِیْتِ فَمِیْقَاتُہُ بَیْتُہُ۔وَ مَنْ اَحْرَمَ مِنْ ھٰذِہِ الْمَوَاقِیْتِ لِلْعُمْرَۃِ وَاعْتَمَرَ فَمِیْقَاتُ حَجِّہِ مَکَّۃُ لَاحَاجَۃَ لَہُ فِیْ اِحْرَامِہِ لِلْحَجِّ اِلَی الرُّجُوْعِ اِلٰی مِیْقَاتٍ مِّنْ ھٰذِہِ الْمَوَاقِیْتِ وَمِیْقَاتُ الْعُمْرَۃِ الْحِلُّ کَاَھْلِ مَکَّۃَ اِنْ اَرَادَ الْعُمْرَۃَ مَرَّۃً اُخْرٰی وَمِیْقَاتُ الصِّبْیَانِ مِنْ فَخٍّ

میقات جہاں سے احرام باندھے بغیر گزرنا جائز نہیں۔
۱۔ اہل مدینہ کیلئے مقام ذوالحلیفہ ہے ۔
۲۔ اہل عراق کیلئے ذات عرق ۔
۳۔اہل شام کیلئے جحفہ
۴۔اہل نجد کیلئے مقام قرن المنازل
۵۔اہل یمن کیلئے مقام یلملم۔
اگر ان میقات سے پہلے ہی احرام باندھ لیا جائے یعنی اہل عراق مقام عتیق سے باندھے اور مسلخ زیادہ افضل ہے۔ درمیانی صورت مقام غمرہ اور آخری صورت ذات عرق سے احرام باندھنا ہے۔ اہل مدینہ کیلئے مسجد شجرہ افضل ہے۔ اگر ان میقاتوں سے پہلے احرام باندھے تو بھی جائز ہے بشرطیکہ حج کے مہینوں میں واقع ہو جائے اور اس کے مہینے شوال، ذی قعدہ اور ذی الحجہ کے حج کیلئے مناسب دن ہیں ۔
۶۔ اہل مکہ کیلئے حج میں حرم اور عمرہ میں مقام حل میقات ہے ۔
۷۔جو عازم حج ان مواقیت سے قریب تر مقیم ہواس کیلئے میقات اس کا گھر ہے ۔
۸۔اگر کوئی عازم حج ان مواقیت سے عمرہ کیلئے احرام باندھے اور عمر ہ ادا کرے تو حج کیلئے ان کا میقات مکہ ہی ہے او ر اس کو احرام حج باندھنے کیلئے کسی میقات تک واپسی کی ضرورت نہیں۔
۹۔اگر کوئی دوسری مرتبہ عمرہ ادا کر نے کاارادہ رکھتا ہو تو اس کیلئے اہل مکہ کی طرح میقات حل ہے۔ بچوں کا میقات مقام فخ ہے۔