آباد ہوئی کرب وبلا اُجڑا مدینہ برباد ہوئی میں

آباد ہوئی کرب وبلا اُجڑا مدینہ برباد ہوئی میں زینب کو نہ راس آیا محرم کا مہینہ برباد ہوئی میں اک دن تھا کہ اس شہر کی میں کرتی تھی شاہی ، اور آج تباہی بے غسل پڑا مہرِ نبوت کا نگینہ ،برباد ہوئی میں آباد ہوئی کرب وبلا۔۔۔۔ ۲۷کس لاش پہ روئوں کسے چھوڑوں … Continue reading آباد ہوئی کرب وبلا اُجڑا مدینہ برباد ہوئی میں