اذان اور اقامت کامسٔلہ


اذان اور اقامت کامسٔلہ
پانچوں حاضر فرض نمازوں کی جماعت کیساتھ ادائیگی کی صورت میں اذان او ر اقامت مردوں پر فرض کفایہ ہے. انفرادی صورت میں مستحب ہے ادا ہو یا قضاء اقامت تاکیدی مستحب ہے۔ خواتین کیلئے انکی انفرادی اور باجماعت نماز میں اذان کے بغیر اقامت پڑھے تو جائز ہے۔
اذان کی پہلی تکبیرات چار ہیں باقی تمام کلمات دو دو مرتبہ سے زیادہ جائز نہیں۔ اقامت میںتمام کلمات کا دو دو مرتبہ پڑھنا جائز ہے سوائے آخری تہلیل کے اور قد قامت الصلٰوۃ او ر تکبیرات کے علاوہ ایک ایک دفعہ بھی جائز ہے ۔
نماز صبح کے علاوہ وقت داخل ہونے سے پہلے اذان دینا جائز نہیں، اگرصبح طلوع کے بعد اعادہ کیا جائے تو افضل طریقہ ہے۔ اذان اور اقامت میں ترتیب و موالات واجب ہے۔
کلمات اذان
چہار مرتبہ اَللّٰہُ اَکْبَرُ دو مرتبہ اَشْھَدُاَنْ لَّا اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ دو مرتبہ اَشْھَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا رَّسُوْلُ اللّٰہِ دو مرتبہ اَشْھَدُ اَنَّ عَلِیًّا وَّلِیُّ اللّٰہِ دو مرتبہ حَیَّ عَلَی الصَّلٰوۃِ دو مرتبہ حَیَّ عَلَی الْفَلَاحِ دو مرتبہ حَیَّ عَلٰی خَیْرِ الْعَمَل دو مرتبہ مُحَمَّدٌ وَّ عَلِیٌّ خَیْرُ الْبَشَرِ دو مرتبہ اَللّٰہُ اَکْبَرُ دو مرتبہ لَا اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ
ترجمہ:‌اللہ سب سے بڑا ہے۔ میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سوا کوئی لائق عباد ت نہیں۔ میں گواہی دیتا ہوں کہ محمد ﷺ اللہ کے رسول ہیں۔ میں گواہی دیتا ہوں کہ علیؑاللہ کے ولی ہیں ۔ نماز کی طرف آئو، نیکی کی طرف آئو، کار خیر کی طرف آئو، محمد ﷺ اور علیؑتمام انسانوں سے بہتر ہیں۔ اللہ سب سے بڑا ہے ، اللہ کے سوا کوئی لائق عباد ت نہیں۔
اذان کے دوران الصلٰوۃ خیر من النوم پڑھنا بدعت ہے تاہم اگر اذان صبح سے پہلے یا بعد میں غفلت کے شکار لوگوں کو جگانے کے لیے پڑھا جائے تو کوئی مضائقہ نہیں۔