صوفیہ امامیہ نوربخشیہ

مسنونات روزہ


وَ اَمَّا الْمَسْنُوْنَاتُ فِیْ شَھْرِ رَمَضَانَ فَمِنْھَا التَّسَحُّرُ وَ تَعْجِیْلُ الْفِطْرِ بَعْدَ التَّیَقُّنِ بِالْغُرُوْبِ وَ فِی الْغَیْمِ وَ الْاٰفَاقِ الْمُحْتَجَبَۃِ التَّاخِیْرُ وَ اَنْ یُّفْطِرَ بِالتَّمَرِ اَوِ الْمَائِ وَاَنْ تَقُوْلَ عِنْدَ الْفِطْرِ اَللّٰھُمَّ لَکَ صُمْتُ وَ بِکَ اٰمَنْتُ وَ بِرِزْقِکَ اَفْطَرْتُ وَ عَلَیْکَ تَوَکَّلْتُ وَ تِلَاوَۃُ الْقُرْآنِ اَکْثَرُ مِنْ سَائِرِ الشُّھُوْرِ وَکَثْرَۃُ الذِّکْرِ وَالْاَدْعِیَۃِ وَ الْاِعْتِکَافُ اِنْ کَانَ فِی الْاَیَّامِ الْبَارِدَۃِ فِیْ تَمَامِہِ وَ فِیْ الْعَشْرِ الْاَخِیْرِ اٰکَدُ وَ السِّوَاکُ وَلَوْ کَانَ بِالرُّطَبِ
رمضان میں سنتیں یہ ہیں: ۱۔سحری کرنا ۲۔ غروب آفتاب کے یقین کے بعد افطار میں جلدی کرنا۔۳۔بادل اور پہاڑوں سے ڈھکے افقی علاقوں میں دیر سے کرنا۔۴۔ کھجور یا پانی سے افطار ۔ ۵۔ افطار کے وقت یہ پڑھنا ’’اے رب میںنے تیرے لئے روزہ رکھا ، تجھ پر ایمان لایا ،تیرے رزق سے افطار کیا اور تجھ پر توکل کیا‘‘ ۶۔ دیگر مہینوں کے مقابلے میں کثرت سے تلاوتِ قرآن ۷۔کثرت سے ذکر۔ ۸۔ کثرت سے دعا۔ ۹۔سرد ایام میں پورا مہینہ اعتکاف بیٹھنا۔ آخری عشرے میں زیادہ تاکید ہے ۔ ۱۰۔ مسواک کرنا اگر چہ گیلی لکڑی سے ہی ہو ۔